Ads (728x90)

پیرس میں دہشت گردوں کے حملے کے بعد امریکہ میں اسلام مخالف رجحان میں اضافہ ہو رہا ہے۔ ایسے میں ایک خاتون نے امریکی نیوز چینل فاکس نیوز پر اپنے عقائد اور حب الوطنی کا اظہار امریکی جھنڈا اوڑھ کر کیا۔

صبا احمد رپبلکن مسلم اتحاد کی بانی ہیں۔ وہ ایک ٹی وی پروگرام میں امریکی مسلمانوں کا دفاع کر رہی تھیں اور انھوں نے اپنا سر امریکی جھنڈے سے ڈھانپ رکھا تھا۔

انھوں نے پروگرام میں امریکی مسلمانوں کو حاصل عبادت کے حقوق اور امریکہ کے آئین کے مطابق اپنی مرضی سے مذہب کے انتخاب سے متعلق موقف کا دفاع کیا۔ اپنے نقطۂ نظر کی وضاحت کے لیے انھوں نے امریکی جھنڈے کا حجاب پہن رکھا تھا۔

صبا احمد نے بی بی سی ٹرینڈنگ کو بتایا: ’میں نے آخری لمحوں میں ایسا کرنے کا فیصلہ کیا۔‘ وہ کہتی ہیں کہ انھوں جامنی رنگ کا سکارف پہنے کا فیصلہ کیا تھا لیکن فاکس نیوز کے سٹاف نے کہا کہ یہ رنگ بہت گہرا ہے۔

ٹی وی پروگرام کے دوران اُن کے ساتھ ڈانلڈ ٹرمپ بھی موجود تھے، جن کا کہنا ہے کہ دہشت گردی کو روکنے کے لیے امریکہ میں مساجد کو بند کر دینا چاہیے۔

صبا احمد نے کہا کہ ’ہم جو پیغام دینا چاہتے ہیں وہ یہ ہے کہ ہم امریکی ہیں، ہم مسلمان ہیں اور رپبلکن ہیں، ہمیں متحد ہونے کی ضرورت ہے۔‘

صبا احمد کے حجاب پر سوشل میڈیا میں کافی بحث ہوئی ہے۔

بعض افراد اُن کی حب الوطنی کی تعریف کی: ’ایک خاتون جس نے فاکس نیوز پر امریکی جھنڈے کا سکارف پہن رکھا تھا، اُس نے تمام ایوارڈ جیت لیے۔‘

دوسری جانب بعض افراد نے اس پر ناراضی کا اظہار کیا: ’خدا جانتا ہے کہ امریکی فوجی اس جھنڈے کی خاطر جان قربان کر دیتے ہیں۔ یہ کوئی احمقانہ حجاب نہیں ہے۔‘

ایک صارف نے اپنی ٹویٹ میں کہا کہ ’اگر آپ امریکی خواتین کو امریکی جھنڈے کی بکینی پہنے کے اجازت دے سکتے ہیں تو ایک مسلمان امریکی خاتون حجاب بھی پہن سکتی ہے۔ حجاب کوئی اتنا بڑا مسئلہ نہیں ہے۔

ایک تبصرہ شائع کریں