Ads (728x90)

لاہور: حکومت کی طرف سے سیلزٹیکس میں اضافے کے خلاف آئل ٹینکرز نے ملک بھر میں پٹرولیم مصنوعات کی ترسیل بند کر دی جبکہ آل پاکستان انجمن تاجران نے ودہولڈنگ ٹیکس کے خلاف اپنے مطالبات پورے نہ ہونے پراحتجاجی پروگرام کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ 4 ستمبر سے بینکوں سے لین دین نہیں ہوگا اور 9 ستمبر کو پورے پاکستان میں مکمل شٹر ڈاؤن ہڑتال ہوگی۔

تفصیلات کے مطابق آل پاکستان آئل ٹینکرزایسوسی ایشن رہنما اکرم درانی نے کہا کہ سیلزٹیکس ایک فیصد سے بڑھا کر 6فیصد کر دیا گیا۔ بڑھتی ہو ئی مہنگائی کی بدولت ٹینکرز مالکان پہلے ہی سخت مشکلات کا شکار ہیں۔ اضافی ٹیکس کا نفاذ کر کے حکومت دو وقت کی روٹی بھی تنگ کر رہی ہے۔ ٹیکس کے خاتمے تک احتجاج جاری رہے گا۔ این این آئی کے مطابق ٹینکرز کی ہڑتال کے باعث پٹرولیم مصنوعات کی قلت پیدا ہونے کے خدشات پیدا ہو گئے جس کے بعد عوام میں بے چینی کی لہر دوڑ گئی اور انھوں نے گاڑیوں اور موٹر سائیکلوں میں فلنگ شروع کردی۔ پنجاب کے صوبائی دارالحکومت کے اکثر پٹرول پمپس پر شہریوں کی قطاریں نظر آئیں۔

ایک تبصرہ شائع کریں